غزل…. Ghazal from ANKAHI BAATEIN

آنکھ سے جو گر گئے ان کی نہیں قیمت کوئی
ہیرے تو وہ آنسو ہیں جن کو پی جاتے ہیں ہم


ساتھ چلنے کی ہے تمنا پر پائوں ہیں زخمی مرے
آگے نکل جاتی ہے دنیا پیچھے رہ جاتے ہیں ہم


بس یہ مشکل آخری ہے آگے ہیں آسانیاں
ہرنئی مشکل پہ یوں اپنے دل کو سمجھاتے ہیں ہم


راہِ الفت کے مسافر جب بھٹکتے ہیں تو انہیں
شمعیں اشکوں کی جلا کر راہ دکھلاتے ہیں ہم


غم کواپنے سامنے دنیا کے رسوا کیوں کریں
دل پہ جو لگتی ہیں چوٹیں ہنس کے سہہ جاتے ہیں ہم


دکھ دیے تو جھیلنے کی تاب بھی اللہ نے دی
ہر گھڑی صد شکر مالک کا بجا لاتے ہیں ہم

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s